(+92) 0317 1118263

آداب مسجد

غیروقف شدہ زمین بنی ہوئی مسجد کاحکم

غیروقف شدہ زمین بنی ہوئی مسجد کاحکم فتوی نمبر: 29209

الاستفتاء

سوال: غیر وقف زمین پر بنی مسجد میں نماز پڑھنا کیسا ہے؟ کیا قانونی اعتبار سے وقف کرنا ضروری ہے یا صرف نیت کافی ہے؟ دلائل کی روشنی میں جواب دیکر شکریہ کا موقع دیں۔

الجواب حامدا و مصلیا

واضح ہو کہ غیر وقف شدہ زمین میں بنائی گئی مسجد شرعاً مسجد کے حکم میں نہیں ہوتی ۔ تاہم اس میں نماز ادا کرنے نماز ادا ہو جاتی ہے، مگر مسجد کا ثواب نہیں ملتا ہے۔
نیز یہ بات بھی یاد رہے کہ زبان سے الفاظ ادا کئے بغیر محض نیت کر لینے سے وقف تام نہیں ہوتا، بلکہ شرعاً وقف ہونے کے لیے نیت کے ساتھ زبان سے بھی الفاظ ادا کرنا ضروری ہے، لہٰذا صورت مسئولہ میں جب مالک زمین زبان سے کہہ دے کہ یہ زمین مسجد کے لیے وقف ہے اور اس کے بعد ایک دفعہ اذان و اقامت کے ساتھ جماعت سے نماز ادا کر لی جائے تو شرعاً وہ مسجد بن جائے گی، حکومتی کا غذات میں درج کرانا شرعاً ضروری نہیں، البتہ قانوناً ضروری ہو تو اس کو بھی پورا کرنا چاہیے۔