(+92) 0317 1118263

احکام حج

عید الاضحیٰ کے موقع پر حاجی مسافر ہے یا مقیم

عید الاضحیٰ کے موقع پر حاجی مسافر ہے یا مقیم فتوی نمبر: 40431

الاستفتاء

السلاموعليکم ورحمۃ الله وبرکاته
وبعده (سوال' دلوٸ اختر دقربانۍ په ورزو کى (حاجى مسافر حکم لرى او يا دمقيم؟ که دمسافر حکم لري نو بيا په حاجي باندي داضحيه څه حکم دۍ
ترجمہ: سوال : عید الاضحیٰ کے موقع پر حاجی آدمی مسافر کا حکم رکھتا ہے یا مقیم کا؟پھر اس کی اضحیہ کا کیا حکم ہے؟

الجواب حامدا و مصلیا

ایامِ اضحیہ میں حاجی نے اگر مکہ مکرمہ میں پندرہ دن یا اس سے زیادہ ٹھہرنے کی نیت کی ہو تو وہ وہاں مقیم شمار ہوگا پھر اگر ایسا شخص صاحبِ نصاب بھی ہو تو اس پر قربانی واجب ہوگی ورنہ نہیں۔


کما فی غنية المناسک:ذکر فی الاصل انه لاتجب الاضحية علی الحاج قال فی البدائع ومبسوط السرخسی واراد بالحاج المسافر واما اهل مکة فتجب عليه الاضحية وان حجوا. اھ (ج116/1).


وفی الدرالمختار: (على حر مسلم مقيم) بمصر أو قرية أو بادية عيني، فلا تجب على حاج مسافر؛ فأما أهل مكة فتلزمهم وإن حجوا، وقيل لا تلزم المحرم.(درمختار مع رد المختار۲/۲۷۵) واللہ اعلم بالصواب