(+92) 0317 1118263

فدیہ

شیخ فانی - عمرہ رسیدہ شخص روزہ رکھنے کے بجائے فدیہ دے سکتاہے؟

شیخ فانی - عمرہ رسیدہ شخص روزہ رکھنے کے بجائے فدیہ دے سکتاہے؟ فتوی نمبر: 37519

سوال

جیسا کہ آپ جانتے ہیں کہ رمضان کا مہینہ چل رہا ہے ، لیکن بڑھاپے اور بیماری کی وجہ سے میرے دادا، داددی روزہ نہیں رکھ سکتے، اس لئے وہ فدیہ ادا کرنا چاہتے ہیں، کیا آپ مجھے بتائیں گے کہ وہ دونوں کتنے روپے ادا کریں گے؟ کتنا فدیہ دینا فرض ہے؟ جتنا جلدی ہوسکے اتنا جلدی جواب دے دیں۔

الجواب حامدا و مصلیا

سائل کی دادی، دادا بیماری یا بڑھاپے کی وجہ سے روزے رکھنے پر قادر نہ ہوں اور آئندہ بھی صحت کی اُمید نہ ہو تو ایسی صورت میں وہ روزوں کا فدیہ ادا کرسکتے ہیں، جبکہ روزوں کا فدیہ یہ ہے کہ ہر روزہ کے بدلے صدقہ فطر کے بقدر نصف صاع گندم (جس کا وزن اندازاً دو کلو ہے) یا اس کی قیمت کسی مستحق زکوٰۃ کو دیدے۔


کما فی الہندیۃ: (ومنہا: کبر السن) فالشیخ الفانی الذی لا یقدر علی الصیام یفطر ویطعم لکل یوم مسکینا کما یطعم فی الکفارۃ کذا فی الہدایۃ، والعجوز مثلہ کذا فی السراج الوہاج (الی قولہ) ویطعم عنہ ولیہ لکل یوم مسکینا نصف صاع من بر أو صاعا من تمر أو صاعا من شعیر کذا فی الہدایۃ۔ اھـ (ج۱، ص۲۰۷)۔ واللہ اعلم بالصواب