(+92) 0317 1118263

سود

اکاونٹ کی استعمال کی شرط لگانے سے ملنے والی فری سہولت کا استعمال کرنے کی گنجائش ہے؟

اکاونٹ کی استعمال کی شرط لگانے سے ملنے والی فری سہولت کا استعمال کرنے کی گنجائش ہے؟ فتوی نمبر: 34507

الاستفتاء

السلام علیکم! ٹیلی نار ایزی پیسہ اکاؤنٹ میں ایک ہزار روپیہ رکھنے پر کسٹمر کو یومیہ پچاس فری منٹس ملنے کے متعلق آپ حضرات نے پہلے ایک فتویٰ جاری کیا تھا کہ سود کے حکم میں داخل ہے؟ لیکن ابھی کمپنی نے ایک شرط لگائی ہے کہ فری منٹس اس وقت ملے گا جب مہینہ میں ایک مرتبہ اکاؤنٹ استعمال کرے گا، سوال یہ ہے کہ کیا مذکورہ شرط کی وجہ سے اب بھی یہ فری منٹس استعمال کرنا صحیح نہ ہوگا؟ والسلام!

الجواب حامدا و مصلیا

فری منٹس استعمال کرنے کی حرمت کی علت قرض پر نفع حاصل کرنا ہےاور وہ مذکور شرط لگانے کے بعد بھی بدستور قائم ہے لہٰذا حرمت کا سابقہ حکم اب بھی برقرار رہے گا۔


في السنن الکبری للبیهقى: عن فَضالةَ بنِ عُبَيدٍ صاحِبِ النَّبِىِّ - صلى الله عليه وسلم - أنَّه قال: كُلُّ قَرضٍ جَرَّ مَنفَعَةً فهو وجهٌ مِن وُجوهِ الرِّبا. مَوقوفٌ اھ (۱۱/۲۹۴)


کما فی الدر: وفی الاشباء کل قرض جر نفعا حرام۔ اھـ (ج۵، ص۱۶۶) واللہ اعلم بالصواب!