(+92) 0317 1118263

روزہ کے مفسدات و مکروهات

ہومیوپیتھک دواسونگھنے سے روزہ ٹوٹ جاتاہے؟

ہومیوپیتھک دواسونگھنے سے روزہ ٹوٹ جاتاہے؟ فتوی نمبر: 34499

الاستفتاء

جناب ہومیو پیتھک دوا سونگھنے سے روزہ ٹوٹ جاتا ہے کہ نہیں؟ اگر ہومیو پیتھک ڈاکٹر روزے کے دوران مریض کو دیکھتا ہے اور دوا بناکر دیتا ہے تو دوا کی بو سے روزہ ٹوٹے گا کہ نہیں؟ جواب دے کر مشکور ہو۔ جزاک اللہ

الجواب حامدا و مصلیا

محض دواء سونگھنے سے روزہ فاسد نہ ہوگا۔


کما فی رد المحتار: (قولہ: أنہ لو أدخل حلقہ الدخان) أي بأی صورۃ کان الإدخال، حتی لو تبخر ببخور وآواہ إلی نفسہ واشتمہ ذاکرا لصومہ أفطر لإمکان التحرز عنہ، قال الشرنبلالی: وہذا مما یغفل عنہ کثیر من الناس، ولا یتوہم أنہ کشم الورد ومائہ والمسک لوضوح الفرق بین ہواء تطیب بریح المسک وشبہہ وبین جوہر دخان وصل إلی جوفہ بفعلہ۔ اھـ (ج۲، ص۳۹۵)


وفی الفقہ الإسلامی وٲدلتہ: ما لا یفسد الصوم عند الحنفیۃ: (إلی قولہ) ۹- دخول الدخان، أو الغبار ولو غبار الطاحون، أو الذباب، أو أثر طعم الأدویۃ إلی الحلق، بلا صنع الصائم أی رغمًا عنہ وہو ذاکر الصوم؛ لأنہ لا یمکن الاحتراز أو الامتناع عنہا، لکن لو تبخر ببخور، فآواہ إلی نفسہ، واشتم دخانہ، ذاکرًا لصومہ، أفطر، لإمکان التحرز عنہ، ولا یتوہم أنہ کشم الورد ومائہ، والمسک، لوجود الفرق بین ہواء تطیب بریح المسک وشبہہ، وبین جوہر دخان وصل إلی جوفہ بفعلہ (إلی قولہ) ۱۷- شم الروائح العطریۃ کالورد أو الزہر والمسک أو الطیب۔ اھـ (ج۳، ص۱۷۱۱) واللہ اعلم بالصواب