(+92) 0317 1118263

ادیان متفرقہ

موجودہ دورکے عیسائیوں کو اہل کتاب کہاجاسکتاہے؟

موجودہ دورکے عیسائیوں کو اہل کتاب کہاجاسکتاہے؟ فتوی نمبر: 33343

الاستفتاء

کیا آج کل کے عیسائیوں کو اہل کتاب کہہ سکتے ہیں یا نہیں؟ سوال پوچھنے کی وجہ یہ ہے کہ آج کل تو انجیل (بائیبل) میں تحریف بہت زیادہ ہوچکی ہے، متعدد قسم کی انجیل (بائیبل)دستیاب ہے، سوال پوچھنے کی دوسری وجہ یہ ہے کہ عیسائیوں کے عقائد بھی وہ نہیں جو حضور اقدس ﷺ کے زمانے میں عیسائیوں کے تھے۔

الجواب حامدا و مصلیا

اہل کتاب سے مراد وہ لوگ ہیں جو کسی آسمانی دین کے ماننے والے ہوں اور اللہ تعالیٰ کی وحدانیت کے قائل اور حضرات انبیاء علیہم السلام میں سے کسی کو نبی اور تورات و انجیل وغیرہ کو اللہ کی کتاب مانتے ہوں، اگرچہ انہوں نے اپنے اصل دین کو بدل دیا ہو جیسا کہ تورات وانجیل میں تحریف ہوئی ہے اس لئے آج کل کے عیسائیوں کو بھی اہل کتاب کہنا درست ہے۔


کما فی ردّ المحتار: تحت (قولہ مقرۃ بکتاب) فی النہر عن الزیلعی: واعلم أن من اعتقد دینا سماویا ولہ کتاب منزل کصحف إبراہیم وشیث وزبورداؤد فہو من أھل الکتاب۔ الخ (ج۳، ص۴۵)