(+92) 0317 1118263

احکام عدت

شوہرکی وفات کی اطلاع اگرتاخیرسے مل جائے، توعدت کی ابتداء کب سے ہوگی؟

شوہرکی وفات کی اطلاع اگرتاخیرسے مل جائے، توعدت کی ابتداء کب سے ہوگی؟ فتوی نمبر: 31796

الاستفتاء

میرا بھائی سعودی عرب میں فوت ہوگیا یکم اگست کو، اس کی میت ۲۳ اگست کو پاکستان لائی گئی اور اسی دن دفنا دی گئی لیکن اس کی فوتگی کی اطلاع ۲۳؍ دن بعد اس کی بیوی کو دی گئی، اس کی بیوی کی عدت کب سے شروع ہوگی؟ جس دن فوت ہوا تھا یا جس دن اس کو دفنایا گیا؟ برائے مہربانی اس مسئلہ میں رہنمائی فرمائیں۔

الجواب حامدا و مصلیا

جس دن سائل کے بھائی کا انتقال ہوا ہے اس دن سے بیوہ کی عدت شروع ہوگئی ہے، دفنانے سے عدت کا تعلق نہیں۔


في البحر الرائق: وفي البدائع ان سببہا الموت وشرط وجوبها النکاح الصحیح فلا تجب فی النکاح الفاسد۔ اھـ وسیأتی أن مبدأہا من وقت الوفاۃ لا من وقت العلم بہا۔ا لخ (ج۴، ص۱۳۲)


وفی فتح القدیر: ثم ابتداء المدّۃ من وقت الموت، وعن علي ـ رضي الله عنه ـ من وقت علمها، حتی لو مات فی سفر فلم یبلغہا حتی مضت أربعۃ أشہر وعشر انقضت عدتہا بذالک عند الجمہور، وعندہ ـ رضي الله عنه ـ لا تنقضی العدۃ حتی تمرّ علیہا من حین علمت الخ۔ (ج۴، ص۱۴۱) واللہ اعلم!