(+92) 0317 1118263

شوهر و بیوی کے حقوق

دیور کا بھابھی پر ہاتھ اٹھانا اور مارپیٹ کرنا

دیور کا بھابھی پر ہاتھ اٹھانا اور مارپیٹ کرنا فتوی نمبر: 13550

الاستفتاء

Qabil-e-Aitheraam, Mufti Sahib. Asslam O Alaikum (WRWB)
Q1. Mera benohi ne 2 shadiyaan ki hain, deendar hai, mgr meri bahein ko har 2 din baad marta hai, jb k 2nd biwi ka behad khayal karta hai, magar ab masla ye hai k meri bahen ko oski Saaliya aur oska sauthan marney ke saath saath oska Saala be Maar Raha hai, waja ye batatey hain ke meri bahen onse gaali sunney ke baad onse Moo Maari karti hai, plz reply.. .. ..

الجواب حامدا و مصلیا

صورت مسئولہ كا بيان اگرواقعتہ درست اورمبنى بر حقيقت ہو تواس صورت ميں اولاًتو شخص مذكوركى دوسرى بيوى يا اس كے بہن بهائيوں قطعايہ حق نہيں پہنچتا كہ وہ سائل كى بہن كو ماريں يا ہاته لگائيں اس كے شوہر پر لازم ہے كہ وہ ان لوگوں كو اپنى دست درازى سے روكے اورمنع كرے اورثانياً خود اس شخص پر يہ بهى شرعا لازم ہے كہ وہ دونوں بيويوں كے برابرى والا رويہ اپنائے اوراپنے ظالمانہ رويہ سے اجتناب كرے ، جبكہ سائل كى بہن كو بهى چاہئے كہ وہ اپنے شوہر كيساته زبان درازى اورسوكن يااس كے بهائى بہنوں كيساته ايسى بات ہرگز نہ كرے جو شرعا ناجائز ہو يا خاندانى الجهنوں كا باعث ہو اور غير محارم كے ساته بے حجابانہ بات چيت كرنے سےبهى اجتناب كرے ، تاكہ بلاوجہ كى بد مزگى پيدانہ ہو ، اب اگر اس سب كے باوجود سائل كا بہنوئى اپنے ظالمانہ ومتشددانہ رويہ سے باز نہ آئے تو اپنى بہن كو ايسے ظالم اوردرندہ صفت انسان سے الگ كرنے كے ساته ساته اس كے خلاف قانونى چارہ جوئى بهى كى جاسكتى ہے